Science And Technology News

سائنس ٹیکنالوجی

October 03 2018 swat-post-calendar-prepared-marijuana-robots-to-reduce-labor-deficiency-in-japan

جاپان میں مزدوروں کی کمی دور کرنے کیلیے مستری روبوٹ تیار

hello

ٹوکیو: جاپان میں کم شرح پیدائش اور مزدوروں کی شدید قلت کو دیکھتے ہوئے ایک مزدور روبوٹ تیار کرلیا گیا۔جاپان نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ایڈوانسڈ انڈسٹریل سائنس اینڈ ٹیکنالوجی (اے آئی ایس ٹی) کے ماہرین نے بڑی مہارت سے ایک انسان نما مزدور روبوٹ تیار کیا ہے جو تعمیرات کے کام کرسکتا ہے۔ اس سے صاف ظاہر ہے کہ کم ازکم جاپان میں روبوٹ بہت تیزی سے انسانوں کی جگہ لے رہے ہیں۔ اس کی ایک سماجی وجہ یہ بھی ہے کہ جاپان میں روبوٹ بہت پسند اور قبول کیے جاتے ہیں۔اس نئے روبوٹ کو ’ایچ آر پی فائیو پی‘ کا نام دیا گیا ہے جس میں موٹروں اور ایکچوایٹرز کو بڑھا کر انسانوں کی طرح لچک دار بنایا گیا ہے۔ اگرچہ یہ سست روی سے کام کرتا ہے لیکن اس میں غلطی کا امکان نہ ہونے کے برابر ہے لیکن وقت کے ساتھ ساتھ یہ روبوٹ تیزی سے کام کرنے کے قابل ہوگا تاہم اس سے امکان ضرور پیدا ہوا ہے کہ اگلے چند برس میں روبوٹ مستری عام ہوجائیں گے۔روبوٹ کی ویڈیو میں اسے ایک تختہ اٹھاتے اور اسے ڈرل مشین کے ذریعے ایک مقام تک لگاتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔ اس طرح یہ بلڈنگ اور دفاتر سازی میں انسانوں کی مدد کرسکتا ہے اور آزادانہ طور پر بھی اپنا کام انجام دے سکتا ہے۔ اس سے قبل ہم کارسازی اور دیگر کارخانوں میں روبوٹس دیکھ چکے ہیں جو اسمبلی لائن پر مختلف کام انجام دیتے نظر آتے ہیں۔دوسری جانب روبوٹک تھری ڈی پرنٹرز بھی حیرت انگیز کام کررہے ہیں جسے آٹومیشن کا ایک نیا روپ کہا جاسکتا ہے۔ تاہم اے آئی ایس ٹی نے کہا ہے کہ وہ انسانوں کی ضرورت کم سے کم کرتے ہوئے خودمختار روبوٹس سے کام کرانا چاہتے ہیں اس کی وجہ یہ ہے کہ جاپان میں مزدوروں کی کمی ہے لیکن جو مزدور ہیں وہ بہت مہنگے بھی ہیں۔اس ضمن میں امریکی کمپنی بوسٹن ڈائنامکس نے اٹلس نامی روبوٹ بنایا ہے جو بہت سے کاموں کے ساتھ ساتھ پیٹھ کے بل پلٹ بھی سکتا ہے تاہم اے آئی ایس ٹی کا کہنا ہے کہ وہ روبوٹ سے کم درجے کے کام لینا چاہتے ہیں۔