سوات(سوات پوسٹ ڈاٹ کام) سیدوٹیچنگ اسپتال میں معمولی درد کی دوائیاں بھی موجود نہیں عام لوگوں کو شدید مشکلات کاسامنا صوبائی حکومت کے دعوے جھوٹ ثابت ہوئے ہیں متاثرہ شخص کا میڈیا سے فریاد، مینگورہ کے نواحی علاقے امانکوٹ کے رہائشی افضل خان نے میڈیا کے نمائندوں کو بتایاکہ پچھلے رات کو دوبجے میری بیوی کوشدید درد ہوا ،ایمرجنسی حالت میں اس کو سیدوشریف سنٹر اسپتال منتقل کردیا وہاں پر موجود ڈاکٹرنے معائینہ کیا اور کچھ دوائیاں لکھ دی جوکہ اسپتال میں دستیاب نہیں تھی میں نے پرچی لے کر باہر میڈیکل سٹور سے خریدنا چاہئے صرف ایک سٹور کھلاتھا اس میں بھی وہی دوائیاں موجود نہیں تھی ڈاکٹر کے پاس دوبارہ آیامتباد ل ادویات لکھیں مگر وہ بھی نہ اسپتال میں دستیاب تھے اور نہ باہر سٹور میں ان کے مطابق میری بیوی درد سے تڑپ رہی تھی میں سرکاری اسپتال میں مسیحاوں کے درمیان بے بسی کے آنسوں رورہاتھا اس وقت اسپتال میں متعدد ایمرجنسی کے مریض موجود تھے مگر سب کا یہی حال تھا مختلف علاقوں سے علاج کے امیدپر لوگ آئے تھے مگر ڈویژن کے سب سے بڑے اسپتال میں مریضوں کے لئے کچھ بھی دسیتاب نہیں تھا ، انہوں نے مزید کہاکہ تبدیلی کے نام ووٹ لینے والوں نے عام کو بے یارومدد گار چھوڑ دیاہے اسپتا ل میں ادویات کی عدم دستیابی ہے تواس کے لئے متبادل انتظام کرناچاہیں کم از کم تکلیف میں مبتلا لوگوں کے لئے درد کا کوئی انجکشن ہوناچاہیں انہوں نے خیبر پختون خوا کے وزیراعلی ، ایم پی اے فضل حکیم ،ایم این اے سلیم الرحمان سے اپیل کی ہے کہ کم از کم عمران خان کے اس وعدے کا پاس رکھیں اور ایمرجنسی میں ادویات کی فراہمی کو یقینی بنایاجائے۔